کیا مرشد کے پاوں کو بوسہ دیا جا سکتا ہے؟

سوال نمبر:3188
السلام علیکم مفتی صاحب! میرا سوال یہ ہے کہ کیا مرشد کے پاوں کو بوسہ دیا جا سکتا ہے؟

  • سائل: طیب شہزادمقام: پنڈی بھٹیاں
  • تاریخ اشاعت: 20 مئی 2014ء

زمرہ: تعظیم و آداب

جواب:

مرشد اگر شریعت کا پابند ہو، مریدوں کا متلاشی نہ ہو، اللہ اور اس کے رسول ﷺ کے مشن کو فروغ دے رہا ہو، لوگ اس سے دین کا فہم و ادراک پائیں تو ایسے مرشد کے پاوں کو بوسہ دیا جا سکتا ہے۔ آج کے دور میں بہت کم لوگ اس قابل ہیں۔ لہٰذا یہ دیکھنا ضروری ہے کہ جس کو مرشد کہا جا رہا ہے وہ ایسا کہلانے کا حقدار بھی ہے یا نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟