Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا جس کا کوئی پیر نہیں‌ ہوتا، اس کا پیر شیطان ہوتا ہے؟

کیا جس کا کوئی پیر نہیں‌ ہوتا، اس کا پیر شیطان ہوتا ہے؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: سیدہ فرقانہ       مقام: پاکستان

سوال نمبر 3075:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ (جس کا کوئی پیر نہیں‌، اس کا پیر شیطان ہوتا ہے) اس کتنی صداقت ہے؟

جواب:

قرآن پاک میں ہے:

مَن يَهْدِ اللَّهُ فَهُوَ الْمُهْتَدِ وَمَن يُضْلِلْ فَلَن تَجِدَ لَهُ وَلِيًّا مُّرْشِدًا.

جسے اﷲ ہدایت فرما دے سو وہی ہدایت یافتہ ہے، اور جسے وہ گمراہ ٹھہرا دے تو آپ اس کے لئے کوئی ولی مرشد (یعنی راہ دکھانے والا مددگار) نہیں پائیں گے۔

الکھف، 18 : 17

لہذا قرآن پاک سے یہ تو ثبوت مل گیا کہ گمراہ کا کوئی ولی مرشد نہیں ہوتا اور گمراہ شیطان کے راستے پر ہی ہوتا ہے۔

مزید مطالعہ کے لیے درج ذیل سوالات پر کلک کریں۔

  1. پیر اور مرید سے کیا مراد ہے؟
  2. کیا بیعت کے لیے کسی زندہ شخصیت کا توسط ضروری ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2014-02-15


Your Comments