Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
  وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟ 
فتویٰ آن لائن - کیا ذوالجناح کے ماتھے میں برکت ہے؟

کیا ذوالجناح کے ماتھے میں برکت ہے؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: خرم صدیق       مقام: لاہور

سوال نمبر 3063:
السلام علیکم میں یہ پوچھناچاہتا ہوں کیا حدیث سے کوئی ایسی بات ثابت ہے کہ ذوالجناح کے ماتھے میں برکت ہے؟

جواب:

احادیث مبارکہ میں گھوڑوں کی پیشانیوں کے بارے میں ہے:

عن عبد الله بن عمر رضی الله عنه قال قال رسول الله صلی الله علیه وآله وسلم : الخیل فی نواصیها الخیر الی یوم القیامة.

حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: گھوڑوں کی پیشانیوں کے ساتھ قیامت تک خیر وبرکت وابستہ رہے گی۔

  1. بخاری، الصحیح، 3 : 1047، رقم : 2694، دار ابن کثیر الیمامۃ بیروت
  2. مسلم، الصحیح، 3 : 1492، رقم : 1871، دار احیاء التراث العربی بیروت

ایک اور روایت میں ہے :

عن عروة بن الجعد عن النبی صلی الله علیه وآله وسلم قال الخیل معقود فی نواصیها الخیر الی یوم القیامة.

حضرت عروہ بن الجعد، نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے روایت کرتے ہیں کہ آپ نے فرمایا : گھوڑوں کی پیشانیوں پر قیامت تک کے لیے برکت (بھلائی) لکھ دی گئی ہے۔

  1. بخاری، الصحیح، 3 : 1047، رقم : 2695
  2. مسلم الصحیح، 3 : 1493، رقم : 1873

بخاری ومسلم کے علاوہ بھی ان روایات کودوسرے محدثین نے روایت کیا ہے۔

جہاں تک ذوالجناح کا تعلق ہے یہ برکت اس کے ساتھ خاص نہیں ہے بلکہ احادیث مبارکہ کے مطابق ہر گھوڑے کی پیشانی میں رکھ دی گئی ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2014-04-09


Your Comments