Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - لڑکے اور لڑکی کے لئے شادی کا مناسب اور شرعی طریقہ کیا ہے؟

لڑکے اور لڑکی کے لئے شادی کا مناسب اور شرعی طریقہ کیا ہے؟

موضوع: نکاح   |  شرائط نکاح

سوال پوچھنے والے کا نام: صدیق راجہ       مقام: فتح جنگ

سوال نمبر 2791:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ لڑکے اور لڑکی کے لئے شادی کا مناسب اور شرعی طریقہ بتائیں۔ بعض لوگ جاب نہ ملنے کی وجہ سے شادی نہیں کرتے۔ شرعی طور پر ایسے لوگوں کے لیے کیا حکم ہے؟

جواب:

شادی کرنے والے کے لیے ضروری ہے کہ وہ اپنی بیوی کے جسمانی اور مالی حقوق پورے کر سکتا ہو، اگر نہیں کر سکتا تو شادی نہ کرے۔ جسمانی حقوق پورے کرنے کی صلاحیت نہ رکھنے کی صورت میں تو شادی کرنا حرام ہے اور اگر کوئی جسمانی طور پر حقوق پورے کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتا ہو لیکن ابھی مالی طور پر اس قابل نہ ہو کہ بیوی کے مالی حقوق پورے کر سکے تو اس کے لیے حکم ہے کہ وہ روزے رکھے، اس وقت تک شادی نہ کرے جب تک وہ لڑکی کا مالی طور پر خرچ اٹھانے کی صلاحیت نہ رکھتا ہو، اسے روزگار نہ مل جائے یا اپنے پاؤں پر کھڑے نہ ہو جائے، بہتر ہے شادی نہ کی جائے۔ دوسری طرف یہ بھی خیال رکھنا ہے کہ گناہ سے بچنے کی خاطر ساتھ روزے رکھے جائیں۔ لہذا جو حقوق پورے کرنے کی صلاحیت نہ رکھتا ہو اس کو شادی نہیں کرنی چاہیے جب تک حقوق پورے کرنے کے قابل نہ ہو جائے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-09-09


Your Comments