کیا لاؤڈ سپیکر میں‌ شبینہ پڑھنا جائز ہے؟

سوال نمبر:2446
السلام علیکم! ہمارے گاؤں میں حافظ صاحب ایک عرصہ سے بچوں کو قرآن پاک پڑھا رہے ہیں، اگر کوئی کہے تو اس کے فوت شدگان کے لیے شبینہ بھی پڑھ دیتے ہیں۔ اس کا اہتمام سہ پہر یا رات کے وقت مسجد میں بیرونی لاؤڈ سپیکر کے ساتھ کیا جاتا ہے، اب کچھ لوگ کہتے ہیں کہ اس طرح لاؤڈ سپیکر میں قرآن مجید پڑھنا درست نہیں، کیونکہ قرآن مجید پڑھنا سنت اور سننا فرض ہے۔ اس طرح آواز پورے گاؤں میں جاتی ہے اور ہر سننے والے پر سننا فرض ہو جاتا ہے۔ جو ہر شخص (بیمار، مصروف، سویا ہوا) کے لیے ممکن نہیں۔ اس لیے لاؤڈ سپیکر میں پڑھنا درست نہیں۔ دوسرے گروہ کا موقف ہے کہ ایک یا دو آدمی مسجد میں بیٹھ کر سن لیتے ہیں، اس لئے سب کا سننا ضروری نہیں۔ اس لئے لاؤڈ سپیکر میں پڑھنے میں کوئی قباحت نہیں ہے۔ برائے مہربانی قرآن و حدیث کی روشنی میں وضاحت فرما دیں۔ شکریہ

  • سائل: نصراللہ خاں چوہانمقام: رتی ٹبی صفدرآباد شیخوپورہ
  • تاریخ اشاعت: 13 مارچ 2013ء

زمرہ: تلاوت‌ قرآن‌ مجید  |  عبادات

جواب:

آپ کے سوال کا جواب پہلے گزر چکا ہے
جس کا مطالعہ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟