کیا خاوند کے بھانجے بھتیجے بیوی کے لیے محرم ہیں؟

سوال نمبر:2126
السلام علیکم بہن اور بھائی کے بیٹے یعنی بھانجے اور بھتیجے کے محرم ہونے کے بارے میں‌ واضح حکم قرآن پاک میں‌ موجود ہے۔ کیا خاوند کے بھانجے بھتیجے بیوی کے لیے محرم ہیں؟

  • سائل: محمد حسیب مرزامقام: سیالکوٹ، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 18 ستمبر 2012ء

زمرہ: معاملات

جواب:

خاوند کے بھانجھے اور بھتیجے یعنی اس کی بہن اور بھائی کے بیٹے بیوی کے لیے غیر محرم ہیں۔ آپ کی بیوی کے لیے ان سے شرعی پردہ کرنا واجب ہے۔ محرم وہ رشتے ہوتے ہیں جن کا آپس میں نکاح جائز نہیں ہوتا۔ قرآن مجید میں ان کے محرم ہونے کا کوئی ذکر موجود نہیں ہے۔ یہ غیر محرم ہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟