Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا شدید غصہ میں‌ طلاق دینے کے بعد رجوع ہو سکتا ہے؟

کیا شدید غصہ میں‌ طلاق دینے کے بعد رجوع ہو سکتا ہے؟

موضوع: طلاق

سوال پوچھنے والے کا نام: طاہرہ       مقام: دہلی بھارت

سوال نمبر 1869:
السلام علیکم! کیا فرماتے ہیں علمائے کرام اور مفتیان دین اس مسئلہ پر کہ میری شادی کو بارہ سال ہوئے کبھی ہمارے بیچ لڑائی جھگڑا نہیں ہوا۔ میرے شوہر ہائی بلڈ پریشر کے مریض ہیں۔ ایک دن میرے شوہر نے پیٹ درد کی وجہ سے نیند کی گولیاں کھا لیں، باربار انکا ذہن خود کشی کی طرف جا رہا تھا۔ اس کے بعد پھر انہوں نے یہی کوشش کی جو مجھے ناگوار گزری انہوں نے بی پی کی گولی بھی لینا بند کر دی اس کی وجہ سے ہم دونوں کہ بیچ شدید لڑائی ہوئی میں نے طلاق کا مطالبہ کیا تو پہلی بار مجھے انہوں نے تھپڑ رسید کیا پھر مجھے بہت غصہ آیا تو ان سے میں نے شدید طلاق کا مطالبہ کرنا شروع کیا انہوں نے کہا میں نے تجھے طلاق دی مگر میں نے کہا کہ نہیں طلاق طلاق کہو انہوں نے چاقو سے حملہ کیا اپنا آپا کھو بیٹھے اور جیسے میں الفاظ کہہ رہی تھی وہ وہی دہرا رہے تھے وہ سمجھنے کی حالت میں نہیں تھے تو اب مجھے اپنی غلطی کا احساس ہوا میں نے معافی مانگی اور رجوع کرنا چاہتی ہوں۔ برائے مہربانی بتائیں کیا ہم دوبارہ رجوع کر سکتے ہیں؟ کیا طلاق ہو گئی ہوئی تو کتنی؟ اب مل کر رہنا ہو تو کیا کرنا ہو گا؟ انکی ذہنی حالت اب بھی صحیح نہیں ہے۔

جواب:

اس سوال کا تفصیلی جواب گزر چکا ہے
براہِ مہربانی مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

تاریخ اشاعت: 2012-06-22


Your Comments