اسلام کا ایسے شخص کے بارے میں کیا حکم ہے جو کہے کہ شریعت بعد میں ہے اور میرے معاملات پہلے؟

سوال نمبر:1028
اگر ایک آدمی کہے کہ ”شریعت بعد میں ہے اور میرے معاملات پہلے“۔ تو ایسا کہنے والے کے بارے میں اسلام کیا کہتا ہے۔ جزاکم للہ خیر

  • سائل: محمد عمر الحقمقام: ڈنمارک
  • تاریخ اشاعت: 14 جون 2011ء

زمرہ: ایمانیات

جواب:
ایسے شخص کا اسلام کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔ وہ بے ایمان ہے، شیطان ہے۔ اپنے اس فعل پر اس کو اللہ کے حضور توبہ کرنی چاہیے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟