Fatwa Online

اگر کوئی منظر دیکھنے سے منی خارج ہو تو غسل کا کیا حکم ہے؟

سوال نمبر:3878

السلام علیکم! اگر کوئی منظر دیکھنے سے منی خود بخود خارج ہو، تھوڑی مقدار میں‌ یا زیادہ، تو کیا غسل کرنا واجب ہے؟

سوال پوچھنے والے کا نام: ارسلان احمد

  • مقام: مردان
  • تاریخ اشاعت: 09 اپریل 2016ء

موضوع:طہارت   |  غسل

جواب:

جب منی شہوت کے ساتھ خارج ہو تو اس کا خروج قوت اور جست کے ساتھ ہوتا ہے، جس کے بعد انتشار ختم ہوجاتا ہے۔ منی کے خروج سے غسل واجب ہوتا ہے۔ جب بیماری، بوجھ اٹھانے یا چوٹ لگنے کی وجہ سے منی نکلی ہو تو وہ اچھل کر خارج نہیں ہوتی۔ ایسی صورت میں غسل واجب نہیں ہوتا۔ اسی طرح شہوت کے ساتھ مذی خارج ہونے سے بھی غسل واجب نہیں ہوتا۔ مذی کے خروج کے وقت وہ شہوت یا لذت حاصل نہیں ہوتی جو منی کے نکلنے سے حاصل ہوتی ہے۔ مذی کے اخراج سے غسل واجب نہیں ہوتا، صرف وضو ٹوٹ جاتا ہے۔

شہوت کے ساتھ مطلقاً منی کا نکلنا ناقضِ غسل ہے اور اس کی وجہ سے غسل واجب ہوجاتا ہے۔ کیونکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا فرمان ہے:

الْمَاءُ مِنَ الْمَاءِ

پانی کا استعمال پانی نکلنے سے ہے (یعنی غسل اس صورت میں واجب ہوگا جب انزال ہو)

مسلم، الصحيح، الحيض، باب انما الماء من الماء، رقم: 343

اس لیے پانی یعنی مادۂ منویہ کے انزال سے پانی یعنی غسل واجب ہوجاتا ہے۔ یہ حکم مطلق ہے، اس میں کسی خاص مقدار کی قید نہیں۔ لہٰذا جب منی شہوت کے ساتھ نکلے تو غسل واجب ہو جاتا ہے، خواہ اس کی مقدار کم ہو یا زیادہ۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:محمد شبیر قادری

Print Date : 13 December, 2019 12:26:26 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/3878/