Fatwa Online

باپ کی موجودگی میں بیٹے کی وراثت کیسے تقسیم ہو گی؟

سوال نمبر:2307

السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر کسی شخص کا بیٹا اس کی زندگی میں‌ فوت ہو جائے اور اس کو اولاد بھی ہو، بیٹے کے بعد باپ فوت ہو جاتا ہے۔ اب باپ کی ملکیت میں‌ سے کیا دوسرے وارثوں کے ساتھ فوت شدہ بیٹے کا حصہ ہو گا اور وہ فوت شدہ شخص کے وارثوں کو ملنا چاہیے کہ نہیں؟

سوال پوچھنے والے کا نام: دلشاد جمالی

  • مقام: ٹنڈو اللہ یار، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 13 دسمبر 2012ء

موضوع:تقسیمِ وراثت

جواب:

جو بیٹا باپ سے پہلے فوت ہو گیا، اس کا وراثت میں حصہ نہیں ہوتا۔ وراثت میں سے وہی حصہ پائیں گے جو باپ کی وفات کے وقت زندہ ہونگے یعنی دوسرے بہن بھائیوں اور بیوی میں وراثت تقسیم ہو جائے گی۔ ہاں اگر میت کی کوئی اور اولاد نہیں ہے، تو پھر اس کے فوت شدہ بیٹے کی اولاد کو حصہ ملے گا، یعنی وہ دادا کی وراثت میں حقدار ہونگے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:عبدالقیوم ہزاروی

Print Date : 27 February, 2021 10:58:21 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/2307/